‘جنگجو عورت’ افغان مردوں کے لیے ناقابل قبول

(رپورٹ۔ رائٹرز)

افغانستان میں شدت پسندی سے لڑنے کے لیے خواتین کی بڑی تعداد فوج میں شمولیت اختیار کررہی ہے لیکن ان کے لیے سب اچھا نہیں۔

فوج میں بھرتی ہونے والی عورتوں کو قدامت پسند معاشرے میں مخالفت اور دھمکیوں کا سامنا ہے۔

کابل کے ملٹری ٹریننگ سینٹر سے 150 خواتین تربیت مکمل کرکے فوج کا حصہ بننے والی ہیں جنہیں اپنے وطن کے دفاع کا حصہ بننے پر فخر ہے۔

afghan-women-army-7

21 سالہ سکینہ کہتی ہے کہ اس نے اپنے لوگوں کی جانیں بچانے کے لیے فوج میں شمولیت کا فیصلہ کیا۔ وہ دوسری لڑکیوں کی فوج میں بھرتی ہونے کے لیے حوصلہ افزائی بھی کرتی ہے۔

اقوام متحدہ کے مطابق عورتوں کے لیے پوری دنیا میں سب سے زیادہ نامناسب حالات افغانستان میں ہیں۔

کابل کے نواحی علاقے میں واقع ٹریننگ سینٹر میں خواتین اور مردوں کو الگ الگ تربیت دی جاتی ہے تاہم دونوں کو اسلحہ چلانا، جسمانی مشقت، طبی امداد اور دیگر تمام کام ایک جیسے سکھائے جاتے ہیں۔

afghan-women-army-3

اس اکیڈمی سے فراغت پانے والی تمام خواتین خواندہ ہیں اور ان میں سے اکثریت کا کردار غیر فوجی ہوگا۔

ان خواتین اہلکاروں کی ایک بڑی تعداد افغان اسپیشل فورسز کی معاونت کرے گی تاکہ لوگوں کے گھروں میں چھاپہ مار کارروائیوں میں سہولت رہے۔

امریکا نے 2016 میں افغان فوج میں خواتین کی تعداد میں اضافے کے لیے 9 کروڑ 35 لاکھ ڈالر مختص کئے تاہم کئی سالوں کی تگ و دو کے باوجود افغان فوجی خواتین کی تعداد 900 ہے۔

afghan-women-army-5

ان خواتین میں اکثریت کا کہنا ہے کہ وہ طالبان کی دھمکیوں کی وجہ سے اپنے گھروں کو واپس نہیں جاسکتیں اور کئی خواتین فوج کے اندر خود کو درپیش چیلنجز سے پریشان ہیں۔

افغانستان میں عورتوں کا عوامی عہدوں پر کام کرنا خاصا متنازع معاملہ ہے۔ ایشیا فاؤنڈیشن کے پچھلے سال ہونے والے سروے میں 60 فیصد افغانوں نے خواتین کے فوج یا پولیس میں کام کرنے کی مخالفت کی تھی۔

afghan-women-army-6

مرد رشتے داروں کی مخالفت، مرد ساتھی اہلکاروں کا رویہ، کم تنخواہ، گھریلو ذمہ داریاں، ترقی نہ پانا، مناسب کام اور تربیت نہ دئیے جانا چند ایسی وجوہات ہیں جن کی بنا پر خواتین کی اکثریت فوج چھوڑنے پر مجبور ہوتی ہے۔

afghan-women-army-1

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

امریکا، ڈرون سے گردے کی اسپتال میں ڈیلیوری

ڈرون سے گردے کی اسپتال میں ڈیلیوری

امریکی شہربالٹی مورمیں ڈرون کی مدد سے ڈونر کا گردہ مریض تک پہنچا دیا گیا، ...

کتاب میں کسی کھلاڑی کی کردار کشی نہیں کی، آفریدی

کتاب میں کسی کھلاڑی کی کردار کشی نہیں کی، آفریدی

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے کہا ہے کہ انہوں نے اپنی ...

ماریا شراپوا اٹالین ٹینس سے دستبردار

ماریا شراپوا اٹالین ٹینس سے دستبردار

ٹینس پلیئر ماریا شراپووا کے فینز کیلئے بری خبر ، وہ اب تک کاندھے کی ...

%d bloggers like this: