ایک اور ”منٹو” کو 2 سال کے لیے جیل

مصری ادیب احمد ناجی کو اپنے ناول ”دی یوز آف لائف” کی وجہ سے دو سال جیل کی سلاخوں کے پیچھے گزارنا پڑیں گے۔

احمد ناجی نے اس ناول میں جنسی تعلق پر زیادہ واضح انداز میں لکھا ہے۔ ”عوام الناس کی شرم و حیا مجروح” کرنے کے الزام میں انہیں اس سال فروری میں دو سال قید کی سزا سنائی گئی۔

مصنف کے خلاف ایک مصری شہری نے عدالت میں درخواست دائر کی تھی کہ ”دی یوز آف لائف” کا ایک حصہ پڑھنے سے اس کا فشار خون کم ہوا اور دل کی دھڑکن بے ترتیب ہوگئی۔

اھداف سویف سمیت مصر کے 500 سے زائد مصنفین نے ناجی سے اظہار یکجہتی کے لیے اپنا دستخط شدہ بیان جاری کیا جبکہ مئی میں فلپ روتھ، چماماندا اینگوزی ادیچی اور مائیکل شیبون سمیت 120 بین الاقوامی ادیبوں نے احمد ناجی کی رہائی کے لیے خط بھی لکھا۔

” ناجی کو اپنے ناول میں جنس اور منشیات کے بارے میں لکھنے پر دو سال قید کا سامنا ہے، یہ ایسے موضوعات ہیں جن پر تخلیقی پیرائے میں دنیا بھر لکھا جاتا ہے اور مصر کا آئین فنکارانہ آزادی اظہار کو جتنا تحفظ فراہم کرتا ہے یہ اس پر پورا بھی اترتا ہے۔”

تحریر انسٹیٹیوٹ فار مڈل ایسٹ پالیسی کے مطابق قاہرہ کی عدالت نے احمد ناجی کی سزا معطل کرنے کی اپیل مسترد کردی ہے جس کے بعد انہیں دو سال یا کم از کم اتنا وقت جیل میں گزارنا پڑے گا جب تک رہائی کے لیے کوئی دوسری اپیل منظور نہیں ہوتی۔

تحریر انسٹیٹیوٹ نے اپنی پٹیشن میں ناجی کی سزار کو غیر آئینی قرار دیتے ہوئے اسے آزادی اظہار اور انصاف کے خلاف قرار دیا۔ نو ہزار سے زائد افراد اس پٹیشن پر دستخط کرچکے ہیں۔

احمد ناجی کو مئی میں پین-بربی فریڈم ٹو رائٹ ایوارڈ دیا گیا جو ان کے بھائی نے وصول کیا۔ پین امریکا کی ڈائریکٹر سوزین نوزیل کہتی ہیں ناجی کو تخیل کے جرم پر سزا دینا قانون کی حکمرانی کا تمسخر اُڑانا ہے اور یہ مصر میں فن و ادب کے لیے بڑا دھچکا ہے۔

نوزیل کہتی ہیں احمد ناجی کا نام دنیا بھر کے مصنفین کے لیے ایک پکار ہے کہ وہ مصر میں آزادی اظہار پر یقین رکھنے والوں کے ساتھ کھڑے ہوں جو بنا لڑے اپنے حق سے دستبردار ہونے کو تیار نہیں۔

اسی بارے میں پڑھیں۔ منٹو کبھی جھوٹ نہیں بولتا

x

Check Also

امریکا، ڈرون سے گردے کی اسپتال میں ڈیلیوری

ڈرون سے گردے کی اسپتال میں ڈیلیوری

امریکی شہربالٹی مورمیں ڈرون کی مدد سے ڈونر کا گردہ مریض تک پہنچا دیا گیا، ...

کتاب میں کسی کھلاڑی کی کردار کشی نہیں کی، آفریدی

کتاب میں کسی کھلاڑی کی کردار کشی نہیں کی، آفریدی

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے کہا ہے کہ انہوں نے اپنی ...

ماریا شراپوا اٹالین ٹینس سے دستبردار

ماریا شراپوا اٹالین ٹینس سے دستبردار

ٹینس پلیئر ماریا شراپووا کے فینز کیلئے بری خبر ، وہ اب تک کاندھے کی ...

%d bloggers like this: