ہرچوتھاپاکستانی ذیابیطس کاشکارہے،قومی سروے

رات میں کام’ ذیابیطس و موٹاپے کا خطرہ 

ایک تحقیق کے مطابق رات کی شفٹ میں کام کرنے والے افراد کے نیند کے اوقات میں بےقاعدگی کی وجہ سے ان میں ذیابیطس اور موٹاپے کا شکار ہونے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

یونیورسٹی آف ٹیکساس کے میڈیکل سینٹر کی ایک حالیہ تحقیق کے مطابق رات کی شفٹ میں کام کرنا صحت سے متعلق دیگر مسائل کی وجہ بھی بن سکتا ہے۔

تحقیق کے مطابق نائٹ شفٹ کی وجہ سے دن میں نیند میں خلل پیدا ہوتا ہے اور اس دوران خون میں شوگر کی سطح کافی بڑھ جاتی تھی جس سے انسولین کی سطح کو کم کرنے والے ہارمون پیدا ہوتے ہیں۔

یہی ہارمون عام طور پر شوگر کی مقدار کو کنٹرول کرتے ہیں تاہم جسم کے سست پڑ جانے کی وجہ یہ اپنا کام درست پر نہیں کرتے ہیں جس کی وجہ سے وزن بڑھنے کے ساتھ ساتھ شوگر کا مرض بھی لاحق ہوسکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق چونکہ رات میں کام کرنے والے لوگوں کو دن میں سونے میں پریشانی ہوتی ہے۔ اس لیے انہیں رات میں کام کرنے اور دن میں سونے میں دونوں طرح کی دقتوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

Leave a Reply

x

Check Also

مصر میں مسجد پر حملہ، سوگ میں ایفل ٹاور کی روشنیاں گل

مصر میں مسجد پر حملہ، سوگ میں ایفل ٹاور کی روشنیاں گل

مصر کی مسجد پر دہشت گردوں کے حملے میں جاں بحق افراد کے لوا حقین ...